سر ورق / مقالات / معصومین / حضرت فاطمہ ؑ / شیعوں کے لیے حضرت فاطمہ علیہا السلام کی آخری دعا

شیعوں کے لیے حضرت فاطمہ علیہا السلام کی آخری دعا

حضرت اسماء زوجہ حضرت جعفر نقل کرتی ہیں:

میں حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا کے زندگی کے آخری لمحات میں شہزادی کی جانب متوجہ تھی آپ نے سب سے پہلے غسل کیا اور لباس تبدل کیا اور گھر میں خدا سے راز ونیاز میں مشغول ہوگئیں۔

میں تھوڑا نزدیک ہوئی تو کیا دیکھا کہ شہزادیؑ قبلہ رخ تشریف فرما ہیں اور آپ نے دست مبارک  آسمان کی جانب پھیلا رکھے ہیں اور یوں دعا کررہی ہیں:

خدایا!ان انبیاء کے حق کا واسطہ جنہیں تونے منتخب فرمایا میری جدائی اور فراق میں حسن وحسین کے گریہ کا واسطہ،میں تجھ سے اپنے اور اپنی اولاد کے  گناہکار  شیعوں کے بخشش کا سوال کرتی ہوں۔خدایا میرے آقا! میری ذریت،میرے شیعہ ،میری ذریت کے شیعہ،میرے حبدار اور میری ذریت کے حبداروں کی مغفرت فرما!

عن أسماء بنت عميس في آخر ساعات عمر فاطمة (عليها السلام): اشتغلت بالبكاء و الدعاء، و سمعتها تدعو اللّه و تقول:

إِلَهِی وَ سَیِّدِی اَسْئَلُکَ بِالَّذینَ اصْطَفَیْتَهُمْ وَ بِبُکاءِ وَلَدَیَّ فی مُفارِقَتی اَنْ تَغْفِرَ لِعُصاةِ شیعَتی وَ شِیعَةِ ذُرِّیَتِی،إِلَهِی وَ سَیِّدِی ذُرِّیَّتِی وَ شِیعَتِی وَ شِیعَةُ ذُرِّیَّتِی وَ مُحِبِّیَّ وَ مُحِبِّی ذُرِّیَّتِی۔

ماخذ:

1. الكوكب الدرّي: ج 1 ص 254.

2. صحيفة الزهراء (عليها السلام): ص 173.

شاید آپ یہ بھی پڑھنا چاہیں

غزوہ غابہ کب اور کیسے ہوا؟

دشمن نے رسول خداﷺ کے دودھ دینے والے اونٹوں میں سے 20 اونٹ چرا لیے اور ابوذرغفاری رض کے بیٹے وہاں پر محافظ تھے انہیں شہید کردیا اور اسی زوجہ کو قیدی بنا لیا۔