سر ورق / مقالات / امر بالمروف اور نہی از منکر کیسے ہو؟

امر بالمروف اور نہی از منکر کیسے ہو؟

سوال: اگر کوئی خود کسی گناہ میں مبتلا ہو اور باربار توبہ کرے اور پھر دوبارہ گناہ کرے تو کیا ایسا شخص دوسرے کو امر بالمروف اور نہی از منکر کرسکتا ہے؟

جواب:

امر بالمعروف اور نہی از منکر دوسرے واجبات کی طرح ہے اگر میں کسی بھی وجہ سے واجب پرعمل نہیں کرتا لیکن دوسرے کوامر بالمعروف اور نہی از منکر کر سکتا ہوں تو ضروری ہے اسے انجام دینے میں کوتاہی نہ کروں۔کسی گناہ میں مبتلا ہونا یا نہ ہونا، امر بالمعروف اور نہی از منکر کی شرط نہیں ہے۔ممکن ہے کچھ واجبات کا آپس میں ربط ہو جیسے اگر میں گناہ کرتا ہوں تو نہی از منکر نہ کروں بلکہ ممکن ہے کہ اسی نہی از منکر کی وجہ سے میں بھی گناہ کرنا ترک کردوں۔

حوالہ:رہ نمای طریق،آیت اللہ جاودان حفظہ اللہ،ص35

شاید آپ یہ بھی پڑھنا چاہیں

فلسفہ نبوت، قرآن کی روشنی میں

آیت میں "لم تکونوا تعلمون"کا مطلب یہ نہیں کہ (تم نہیں جانتے تھے)بلکہ اس جملہ کا مفہوم یہ ہے کہ "تم لوگ اس قابل ہی نہیں تھے کہ ان کو جان پاتے"