سر ورق / خبریں / ایران سے استکبار کی دشمنی کی وجہ؟

ایران سے استکبار کی دشمنی کی وجہ؟

ایران سےعالمی استکبار کی دشمنی کی کیا وجہ ہے؟کیوں استکبار ایران کے پیچھے پڑا ہے؟

آپ کو معلوم ہونا چاہیے کہ ایران نے اسلامی انقلاب کے بعد اپنے بل بوتے پر بہت ترقی کی ہے استکبار نے اس کی ترقی روکنے اور اسے عبرتناک مثال بنانے کے لیے دشمنی کی اور مسلسل پابندیاں لگائیں تاکہ کسی طرح ایرا ن کی ترقی کے سامنے بند باندھا جاسکے۔

رہبر معظم کے مطابق ایران کی ترقی لبرل ڈیموکریسی کی منطق اور لاجک کو رد کررہی ہے۔استکبار کی ایرا ن سے دشمنی کی وجہ یہ ہے کہ وہ نہیں چاہتا کہ جمہوری اسلامی ایران ترقی کرے اور اگر ترقی کرے گا اور دنیا کے سامنے ماڈل بنے گا جوکہ ایک دینی نظام کا حامل ہے تو استکبار کی لبرل ڈیموکریسی کے غبارے سے ہوا نکل جائے گی۔

مغرب نے دو صدیوں سے اسی جھوٹے پراپیگنڈے کی بنیاد پر دنیا کے مال و ثروت کو لوٹا۔کسی ملک کے لیے کہا کہ یہاں آزادی نہیں کسی دوسرے ملک کے لیے کہا کہ یہاں ڈیموکریسی نہیں اور اسے بنیاد پر وہاں گھس آئے اور ڈیموکریسی کے نام پر اس ملک کے اموال ،خزانوں اور ملکی وسائل کو لوٹ لیا ۔فقیر یورپ مالدار ہوگیا اور اسکی قیمت دنیا کے امیر ممالک متحدہ ہندوستان اور چین کو دینی پڑی اور ایران میں اس طرح سے نہ آسکے مگر پھر بھی ایران کا کچھ نہ چھوڑا۔

ایک نمونہ آپ کے سامنے  افغانستان ہے جس میں 20سال تک امریکی رہے اور سب کچھ لوٹا اور پھر جس طالبان حکومت کو ختم کیا تھا اسی حکومت کے ہاتھ افغانستان کو دے کر چلتے بنے۔

اب آپ غور کریں کہ اگرایک ملک سامنے آئے دنیا میں ایک نظام سامنے آئے جو لبرل ڈیمو کریسی کو مسترد کردے اور حقیقی معنوں میں اپنے ملک کی عوام کو شناخت دے۔انہیں بیدار کرےاور انہیں مضبوط کرے اور سب کو ساتھ لیکر لبرل ڈیموکریسی کے سامنے ڈٹ کر کھڑا ہواجائے اور اسے مسترد کردے۔یہ فقط ایران ہی ہے۔
اسی لیے استکبار جمہوری  اسلامی کا دشمن ہے کیونکہ ایران نے لبرل ڈیموکریسی کو مسترد کرکے ملک میں انکا داخلہ بند کردیا ہے۔

حوالہ: میڈیا

شاید آپ یہ بھی پڑھنا چاہیں

شیراز: حرم شاہچراغ میں دہشتگردوں کی خون کی ہولی،19 شہید،23 زخمی

حملہ آوروں نے مزار کے اندر داخل ہونے کے بعد زائرین پر اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جس کے نتیجے میں 19 افراد موقع پر شہید ہوگئے